Archive

Posts Tagged ‘India’s republic day’

مسئلہ کشمیر کا حل بھارتی آئین میں نہیں‘ حق خود ارادیت میں: مظفر آباد میں یوم سیاہ پر محمد فاروق رحمانی اور دیگر لیڈروں کاخطاب۔

January 26, 2011 1 comment

مظفر آباد 26جنو ری2011:  آج یہاں ایک مقا می ہو ٹل میں جموں و کشمیر پیپلز فریڈم لیگ کے زیر اہتمام منعقدہ کشمیر کانفر نس میں ایک قرار داد منظور کی گئی جس میں اقوام متحدہ کی سلا متی کو نسل پر زور دیا گیا کہ وہ کشمیر کے خصوصی دورے سے واپس آئے ہو ئے اپنے نما ئندے  مار گریٹ سکا گو یا کی اِنسا نی حقوق کی پاما لیوں کے با رے میں رپورٹ کا جا ئزہ لے اور اُس کی روشنی میں ریاست میں نا فذ شدہ تمام کا لے قوانین کی منسو خی‘ نظر بندوں کی رہائی اور بھارتی افواج اور پولیس کے انخلاءکے لئے حکو مت ہند پر دباﺅ ڈالے۔ اِس کے علاوہ گذ شتہ اکیس سالوں میں بھارتی فوج اور پولیس نے علاقے میں اِنسا نیت کے خلاف جو جرائم کئے ہیں‘ اُن کاتدارک کر نے کے لئے بھارت کو عالمی عدالت میں بلائے اورکشمیر کا مسئلہ حق خود ارادیت کے اصول کی ر وشنی میں آزادانہ رائے شما ری کے ذریعے سے طے کر انے کا فرض نبھا ئے۔ اِ س کانفرنس کی صدارت جموں و کشمیر پیپلز فریڈم لیگ کے چئیرمین محمدفاروق رحمانی نے انجا م دی۔ اُنہوں نے اپنے خطا ب میںبھارتی آئین کے تحت مسئلہ کشمیر کے حل کا مفروضہ مسترد کر تے ہو ئے کہا کہ حق خودارادیت اور رائے شما ری ہی مسئلہ کشمیر کا حل ہے۔ حال ہی میںجنو بی سودان میں بھی رائے شما ری کرا ئی گئی۔ اُنہوں نے کشمیریوں کی مسلسل قربا نیوں کو خرا ج تحسین پیش کر تے ہو ئے کہا کہ مو جو دہ کشمیری نسل بھی حق خود ارادیت اور رائے شما ری کے بغیر اور کسی حل پر تیار نہیں ہو گی۔ وہ ریاست کی وحدت اور سالمیت پر کو ئی آنچ آنے نہیں دے گی۔ اُنہوں نے آزاد کشمیر کے حکمرا نوں پر زور دیا کہ وہ اُن مظلوم لو گوں کو ما یوس نہ کر ے‘ جو بھارتی فو جی جارحیت کی و جہ سے کئی سالوںسے آزاد کشمیر میں رہا ئش پذیر ہیں۔ اُن کے معا شی‘ تعلیمی اور روزگار کے مسا ئل حل کئے جائیں اور اُنہیںدفتری طوا لت اور رشوت ستا نی کا شکار نہ بنایا جائے۔ کانفرنس میں بڑی تعداد میں مہا جرین کشمیر نے شرکت کی اورمہا جرین کشمیر کی کئی لیڈروں نے اپنے اپنے خطا ب میں بھارت کو کشمیر سے کا لے قوانین کی واپسی اور جیلوں میں بند قیدوں کی رہائی کا مطا لبہ کیا۔

Advertisements

یو م سیاہ پر مظفر آباد میں کشمیر کا نفرنس کی قرار داد

January 26, 2011 Leave a comment

یو م سیاہ پر مظفر آباد میں کشمیر کا نفرنس کی قرار داد

مظفر آباد:

26اکتو بر2011ئ

ہندوستان کے یو م جمہوریہ یعنی یو م سیاہ پر جموں و کشمیر پیپلز فریڈم لیگ کے زیر اہتمام منعقدہ حریت پسند انِ کشمیر کا یہ اجتماع کشمیری عوام کے مسلّمہ اور تا ریخی مو قف ۔ حق خوداردایت کا اعلا ن اِن الفا ظ میں کر تا ہے۔

(1) 27 اکتو بر 1947ءکو ہندو ستان کی افوا ج نے جموں و کشمیر پر ایک خوفنا ک فو جی جا رحیت کی اور 26جنو ری 1950ءکو اِس ریاست پر بھارتی آئین نا فذ کردیا گیا ۔ یہ اجتما ع بھارتی آئین کے نفا ذ کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے منا فی قرار دیتے ہو ئے‘ اِس کو مسئلہ کشمیر کے حل میں ایک بہت بڑی رکا وٹ تصور کرتا ہے ۔

(2) جموں و کشمیر بھارت کا اَٹو ٹ حصہ نہیں ہے‘ کیو نکہ ریاست جموں و کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ بین الاقوا می قراردوادوں کی رو شنی میں ایک آزاد اور بے ریا را ئے شما ری کے ذرےعے ہو نا باقی ہے ۔

(3) اقوام متحدہ کے کمیشن برا ئے ہند وپاکستان کی تا ریخی قراردادوں کے علاوہ خود بھی بھارتی رہنما ﺅں نے پارلیمنٹ کے اندر اور با ہر کشمیریوں اور عالمی رائے عامہ کے سا تھ رائے شما ری کا وعدہ کیا تھا ۔

(4) ہم اپنے اِس غیر متزلزل ایمان کا آج اِس یو م سیاہ پر پھر اعا دہ کر تے ہیں کہ بھارتی آئین کے دا ئرے میں کشمیری عوام مسئلہ کشمیر کا کو ئی حل قبول نہیں کریں گے۔ ہم حق خودارادیت کے سوال پر ریاست کی وحدت پر کو ئی آنچ نہین آنے دیں گے۔

((5 ہم مقبو ضہ جموںو کشمیر پر 1947ءسے علی الخصوص 1990ءسے بھارتی فو جی بالا دستی ‘ ظالما نہ اقدامات اور کا لے قوانین کے تسلسل کو پورے خطے کی سلا متی اور امن کے لئے خطرنا ک سمجھتے ہیں۔ اور تما م سخت گیر قوا نین کے خا تمے کا مطا لبہ کر تے ہیں۔

((6 یہ اجتما ع اقوا م متحدہ کے خصوصی نما ئندے کے حالیہ دورہ کشمیر پر مبنی رپورٹ کی بنیاد پر عالمی ادارے سے پُر زور مطا لبہ کرتا ہے کہ بھارتی حکمرانوں کو جموںو کشمیر میںبے گنا ہ اِنسانوں کے قتل ‘ اغوا اورخواتین کے ساتھ زیادتیوں کے شرمنا ک جرا ئم میں بین الاقوامی قوانین کے مطا بق مقدمات چلا ئے جائیں اور قصور وار فو جی اور سِول حکمرانوں اور اِس میں اما نت کر نے والوں کو عبر تنا ک سزائیں دی جائیں۔

((7 یہ اجتماع جموں و کشمیر سے بھارتی افوا ج کے مکمل انخلاءپر زور دیتا ہے تا کہ مسئلہ کشمیر کے پر امن حل کے لئے مذا کرات کا ایک خوشگوار ماحول پیدا ہو سکے۔

(8) یہ اجتماع حکو مت پاکستان پر زور دیتا ہے کہ وہ مو جو دہ بین الاقوا می ما حول میں جموں وکشمیر میں یو این او کی رائے شما ری سے متعلق قراردادوں کی بڑھتی ہو ئی اہمیت میں سر گرم حکمت عملی اختیار کر ے۔

(9) یہ اجتما ع حکو مت آزاد کشمیر پر زور دیتا ہے کہ وہ آزاد کشمیر اور پاکستان میں مقیم بے گھر اور مظلوم کشمیریوں کے جملہ مسا ئل حل کرا نے کے لئے رشوت ستانی اور لال فیتہ سسٹم کا خا تمہ کر ے۔ اور اُن کے روزگار اور تعلیی مسا ئل کو تسلی بخش طور پر حل کرا نے کے احکامات جا ری کر ے۔

جاری کردہ اَز مظفر آباد

جموں وکشمیر پیپلز فریڈم لیگ